Vocation and education by Umair Javed

admissionadmin April 5, 2020 No Comments

  Vocation and education Umair JavedFebruary 24, 2020 The writer teaches politics and sociology at Lums. THERE are 196 chartered general-purpose universities in Pakistan. Most of these universities offer courses in the humanities and social sciences (HSS), including history, philosophy, sociology and political science. A brief look at the statistics reveals that there are over 200,000 students enrolled in these programmes. The total number of faculty teaching in these programmes is likely to number around 10,000. What is the current standard of the faculty and the curriculum? We know for a fact that the vast majority of Pakistani social scientists and humanities scholars are not publishing widely in international journals. Pakistani scholars are rarely part of international debates or even regional ones for that matter. In terms of pedagogical contributions, a brief review of the political science curriculum at one of the largest universities in the country shows that it […]

Read More

سول انجینئرنگ میں کیریئر-فاروق احمد انصاری

admissionadmin April 4, 2020 No Comments

فاروق احمد انصاری کنساس اسٹیٹ یونیورسٹی کے ایسوسی ایٹ پروفیسر رے بوائل کہتےہیں، ’’اکثر لوگ سمجھتے ہیں کہ ماہرین تعمیرات کسی عمارت کی ہیئت و ساخت کا تعین کرتے ہیں، مگر اصل میں سول انجینئرز ہی وہ لوگ ہوتے ہیں جو کسی بھی عمارت کو کام کرنے کے لائق بناتے ہیں‘‘۔ عمارتوں کے فرش اور دیواریں اس غرض سے تیار کی جاتی ہیں کہ وہ عمارت کا زیادہ سے زیادہ وزن برداشت کرسکیں اور چھتیں اس طرح بنائی جاتی ہیں کہ وہ موسموں کی سختیوں کا مقابلہ کرسکیں۔عمار ت کی تعمیر میں ان بنیادی عناصر کےساتھ ساتھ بجلی، پانی اور نکاسی کے انتظامات بھی اہمیت کے حامل ہوتے ہیں۔ تعمیراتی مادے کے معیار کو بھی ملحوظ خاطر رکھا جاتا ہے جبکہ آگ یا دیگر آفات کی صورت میں ہنگامی اخراج کے راستوں اور طریقوں کا بھی تعین کیا جاتاہے، یعنی کسی بھی عمارت کی بنیاد رکھنے سے پہلے اس کے استحکام و پائیداری، […]

Read More

ماحولیاتی تبدیلی اور بچوں کا مستقبل؟-فاروق احمد انصاری

admissionadmin April 4, 2020 No Comments

فاروق احمد انصاری زمانہ بدل رہاہے، ماحولیات بھی تبدیلی کی زد میں ہے لیکن خطرے کی بات یہ ہے کہ یہ تبدیلی مثبت کے بجائے منفی نظر آتی ہے۔ آج کے بچے اپنے والدین کے بچپن سے زیادہ درجہ حرارت، فضائی آلودگی اور صفائی کے فقدان کا شکار ہیں۔ یہ نسل جب بڑ ی ہوگی تو اس کی آنے والی نسل اس سے زیادہ ماحولیاتی آفات و حادثات کا سامنا کررہی ہوگی۔ اس کا سیدھا مطلب یہ ہےکہ اگر ابھی ہم نے اقدامات نہ کیےتو وہ ساری سائنس فکشن کی کہانیاں سچ ثابت ہو جائیں گی جن میں ایک تباہ حال، ویران اور قحط زدہ دنیا دکھائی جاتی ہےاور وہاں انسانوں کا گروہ پانی اور سبزے کو ترس رہا ہوتاہے۔ ماضی کے مقابلے میں آج دنیا کا درجہ حرارت بڑھ چکاہے، اس لیے یہ کہنا درست ہوگا کہ آج پیدا ہونےوا لا بچہ پیدائشی طور پر ماحولیاتی تبدیلیوں کے اثرات سے […]

Read More